کرم کی ادھر بھی نگاہ کملی والے

نعت خواں:

نعت
کرم کی ادھر بھی نگاہ کملی والے
پناہ کملی والے پناہ کملی والے

حرص سے ہوس سے حسد سے بغض سے
بچا کملی والے بچا کملی والے

مجھ عاصی کو اک بار پھر اپنے در پہ
بلا کملی والے بلا کملی والے

ہے اجڑی ہوئی میرے دل کی بھی بستی
بسا کملی والے بسا کملی والے

وہ جنت سے اعلیٰ مدینے کی گلیاں
دکھا کملی والے دکھا کملی والے

ہے میرا مقدر بھی سویا کبھی کا
جگا کملی ولے جگا کملی ولے


مزید اردو نعتیں

Leave a Comment