یَا صَاحِبَ الۡجَمَالِ وَیَا سَیِّدَالۡبَشَر

شاہ عبدالحق محدث دھلوی رحمۃ اللہ علیہ نے فرمایا

یا صاحب الجمال و یا سید البشر
من وجہک المنیر لقد نور القمر
لا یمکن الثناء کما کان حقہ
بعد از خدا بزرگ توئی قصہ مختصر

یَا صَاحِبَ الۡجَمَالِ وَیَا سَیِّدَالۡبَشَر
مِنۡ وَّجۡہِکَ الۡمُنِیۡرِ لَقَدۡ نُوِّرَ الۡقَمَرُ
لَا یُمۡکِنِ الثَّنَاءُ کَمَا کَانَ حَقَّہٗ
بعد از خُدا بزرگ تُو ئی قِصّۂ مُختصر

ترجمہ

اے صاحب الجما لﷺ اور اے انسانوں کے سردار ﷺ
آپ ﷺ کے رخِ انور سے چاند چمک اٹھا
آپ ﷺ کی ثنا کا حق ادا کرنا ممکن ہی نہیں
قصہ مختصر یہ کہ خدا کے بعد آپ ﷺ ہی بزرگ ہیں


مزید اردو نعتیں

2 thoughts on “یَا صَاحِبَ الۡجَمَالِ وَیَا سَیِّدَالۡبَشَر”

    • Ye kaalam kiska hai is pr baaki ki buzurgo me ikhtelaaf hai , koi buzurg ne isko Saadi Shirazi ka kaha aur kisi ne isko Abdul Haq Muhaddis ka kaha , dono hi buzurg buland ehtaram waale hain aur ye rubaii sab kuchh keh deti hai ❤️❤️

      Reply

Leave a Comment